• The Facebook Platform

Results 1 to 4 of 4
  1. #1
    Join Date
    Jul 2011
    Posts
    13
    Points
    14.70
    Rep Power
    20

    Default دھوپ کے دشت میں شیشے کی ردائیں دی ہیں

    دھوپ کے دشت میں شیشے کی ردائیں دی ہیں
    دھوپ کے دشت میں شیشے کی ردائیں دی ہیں
    زندگی! تو نے ہمیں کیسی سزائیں دی ہیں

    شعلوں جیسی ہی عطا کی ہیں سلگتی بوندیں
    آگ برساتی ہوئی ہم کو گھٹائیں دی ہیں

    اک دعا کو نے رفاقت کی تسلی دے کر
    عمر بھر ہجر میں جلنے کی سزائیں دی ہیں







    دل کو بجھنے کا بہانہ کوئی درکار تو تھا
    دکھ تو یہ ہے ترے دامن نے ہوائیں دی ہیں

    کیسا ماحول ملا ہے ہمیں جینے کے لئے
    دینے والے نے ہمیں کیسی فضائیں دی ہیں

  2. #2
    Join Date
    Apr 2010
    Posts
    779
    Points
    959.65
    Rep Power
    10000

    Default

    very nice sharing...

  3. #3
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    اللہ کی زمین
    Age
    28
    Posts
    383
    Points
    521.88
    Rep Power
    920

    Default

    آپ اگر ٹیکسٹ کو شیڈو دے کر کوئی اور رنگ اپلائی کرتی تو صاف پڑھا جاتا۔ لیکن کوشش اچھی ہے۔ جزاک اللہ

  4. #4
    Join Date
    Jun 2011
    Posts
    114
    Points
    196.62
    Rep Power
    121

    Default


    ThankS FoR SharinG


 

Thread Information

Users Browsing this Thread

There are currently 1 users browsing this thread. (0 members and 1 guests)

     

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •