• The Facebook Platform

Page 1 of 2 12 LastLast
Results 1 to 5 of 9
  1. #1
    Join Date
    Jul 2011
    Posts
    151
    Points
    170.49
    Rep Power
    159

    Default Who are the Yajooj and Majooj?

    Who are the Yajooj and Majooj?

    The Ya'jooj and Ma'jooj

    During the reign of Hadhrat Isa (A.S.) people will live an extremely peaceful life filled with prosperity and abundance. Then the wall which imprisons Ya'jooj and Ma'jooj will break and they will surge forth in large numbers.

    "But when Ya'jooj and Ma'jooj are let loose and they rush headlong down every hill" (Quran 21:97)

    Who are the Ya'jooj and Majooj?

    Zul Qarnain (A.S.) who was a pious and just Ruler travelled to many lands and conquered them, establishing justice and the Law of Allah therein. Allah Ta'ala provided him with all forms and material strength through which he was able to carry out his conquests and missions.

    He once carried out a mission in three directions, the far west, the far east, and then in a northerly direction. It was here that he came across a tribe of people who complained to him about the tribes of Ya'jooj and Majooj which inhabited the land behind two huge mountains and often emerged from behind these mountains to perpetrate acts of anarchy and plunder among them. They requested Zul Qarnain (A.S.) to erect a barrier between themselves and the tribes of Ya'jooj and Ma'jooj so that they could be saved from their atrocities. With the material strength at his disposal, Zul Qarnain (A.S.) enlisted their physical labor and set about erecting a high wall between the two mountains. The height of the wall or its exact length is unknown. What is known is that the height of this wall reaches that of the summit of both mountains. It is made with blocks or sheets of iron, which is further strengthened by molten lead. In this manner Ya'jooj and Majooj are unable to scale the wall, or cross it, except when it is the will of Allah.

    "And when the promise of my Rabb approaces, He will level it to dust" (Quran 18:98)

    They are situated in a land of ice which is hidden from our gazes and the exact location of which is unknown. Though many interpretations do exist in this respect, none of these can be said to absolute.

    Ya'jooj and Majooj are human beings and according to a narration they are from the progeny of Yafith ibn Nooh (A.S.).

    Some Ahadith...

    In a lengthy hadith by Hadhrat Nawwas ibn Sam'aan (R.A.) Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) is reported to have said:

    "...Allah will send revelation upon Eesa (A.S.) that 'Such a creation of mine is now going to emerge that no power will be able to stop them. Therefore take my servants and ascend the Mount of Toor.' Then Ya'jooj and Majooj will emerge and surge forth in all their fury. When those from among them who constitute the former part of their army pass the lake of Tiberias (which is in northern Palestine), they will drink up all the water of that lake and by the time those that constitute the latter part of that same army pass the lake, they will say, "There used to be water here (long ago). When they reach the Mount of Khamr in Jerusalem, they will arrogantly proclaim: 'We have conquered the people of the earth, now we will annihilate those in the sky.' So saying they will fire their arrows towards the sky. When the arrows return to the ground they will be blood stained.

    In the meantime, Eesa (A.S.) will be on the Mount of Toor with his followers. At that time the head of and ox will be as valuable as is a hundred dinars to you in this day. [This indicates the scarcity of provisions]. Faced with these hardships, Eesa (A.S.) and his followers will make dua unto Allah (to remove this calamity). As a result, Allah will cause sores to appear on the necks of each and every individual of these people which will cause their death suddenly. When Eesa (A.S.) and his followers descend from the Mount of Toor there will not be a single space on the land where the dead rotting bodies of these people is not littered, giving off a horrendous odour. Eesa (A.S.) and his followers will once more supplicate unto Allah as a result of which Allah will send down huge birds whose necks will be as thick as that of the necks of camels, and they will dump these bodies in a place where Allah wills. (According to a narration by Tirmidhi, they will be dumped at a place called Nahbal).

    Allah Ta'ala will then send down a heavy rain, the waters of which will flow in every part of the earth cleansing it thoroughly. It will rain for a period of forty days.

    The Muslims will then burn the bows and arrows of the Ya'jooj and Ma'jooj for a period of seven years.

    Allah will order the earth to yield forth its crops in abundance and there will be such blessing and prosperity that one pomegranate will be sufficient for a whole group while the peel thereof will suffice to cast a shadow over them. The milk of one camel will be sufficient for many groups while one milk giving cow will be sufficient for a whole tribe. One milk giving goat will be sufficent for a whole family..."

    (Muslim)

    Hadhrat Abu Saeed Khudri (R.A.) narrates that Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) said:

    "On the day of Qiyamah Allah will say to Adam (A.S.) to pick out the Jahannamis from his entire progeny. Adam (A.S.) will ask: 'O Rabb, who are they?'

    Allah will say: 'Nine hundred and ninety nine of a thousand are Jahannami while the one is a Jannati.'

    On hearing this the Sahaba were overtaken by fear and they asked "O Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam), who will that one Janniti be?'

    Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) said: 'Do not grieve, the nine hundred and ninety nine will be Ya'jooj and Ma'jooj while you will be the Jannati."' (i.e. your numbers in relation to them will be one in a thousand).

    (Bukhari and Muslim)

    Hadhrat Abdullah ibn Umar (R.A.) says that Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) said:

    "Allah Ta'ala divided mankind into ten parts. Nine tenths constitute Ya'jooj and Ma'jooj while the remaining tenths constitutues the rest of mankind."

    Hadhrat Zainab bint Jahsh (R.A.) says: "...once Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wassallam) awoke from such a sleep that his face was red and these words were on his tongue: 'There is none worthy of worship except Allah. Destruction is upon the Arabs on account of the evil which has come close to them. Today a hole as big as this has opened up in the wall of Ya'jooj and Ma'jooj.' ..and Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) indicated the size of the hole forming a ring with his index finger and thumb."

    (Bukhari and Muslim)

    Hadhrat Abu Hurairah (R.A.) narrates that every day Ya'jooj and Ma'jooj break (dig) through the wall erected by Zul Qarnain (A.S.) until they reach the end of it to that extent that they can actually see the light on the other side. They then return (home) saying that 'We will break through tomorrow.' But Allah Ta'ala causes the wall to revert to its original thickness and the next day they start digging through the wall all over again, and this process continues each day until as long as Allah wills them to remain imprisoned. When Allah wishes them to be released, then at the end of the day they will say, "If Allah wills, tomorrow we will break through." The following day they will find the wall as they had left it the previous day (i.e. it will not have returned to its orginal state) and after breaking the remaining part of it they will emerge."

    (Ahmad, Tirmidhi, Ibn Majah)







    Commenting on the above hadith, Allamah Ibn Arabi says, Three miracles are evident in this Hadith:

    1.) It never occurs to these tribes that they must continue work during the night. After all, they are in such large numbers that they can easily delegate the work among themselves and work in shifts. But Allah does not allow this thought to occur to them.

    2.) It never occurs to them that they can merely cross the mountains or scale the wall, which they can do through the aid of equipment and implements wich they possess in large numbers. According to a narration by Wahab ibn Munabbah it is known that these tribes are agriculturists and artisians possessing various types of equipment.

    3.) The thought of saying "If Allah wills" never enters their minds and it will only occur to them to say it when Allah wills that they be released.

    from: "Signs of Qiyamah"
    by Mohammed Ali Ibn Zubair Ali

  2. #2
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    اللہ کی زمین
    Age
    28
    Posts
    383
    Points
    521.88
    Rep Power
    920

    Default

    السلامُ علیکم
    جزاک اللہ خیر
    Signature - Who are the Yajooj and Majooj?
    idf69z - Who are the Yajooj and Majooj?

  3. #3
    Join Date
    Aug 2011
    Posts
    1
    Points
    1.00
    Rep Power
    0

    Default

    assalamualaikum, hu khair

  4. #4
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    PAKISTAN
    Posts
    233
    Points
    292.75
    Rep Power
    0

    Default

    ALL IN URDU TRANSLATE
    یاجوج اور ماجوج بنی

    حضرت عیسی (ع) کا دور کے دوران لوگوں کو خوشحالی اور زندگی سے بھرپور سے بھرا ہوا ایک انتہائی پرامن زندگی زندہ رہے گا. دیوار جس میں یاجوج اور ماجوج بنی imprisons پھر توڑ اور وہ بڑی تعداد میں نکلنے میں اضافے گا.

    "لیکن جب یاجوج اور ماجوج بنی ڈھیلے دو کر رہے ہیں اور وہ ہر پہاڑی کے نیچے اتر تیزی سے لے جانا" (21:97 قرآن)

    یاجوج اور Majooj کون ہیں؟

    Zul ذوالقرنین (ع) جنہوں نے ایک اور صرف نیک حکمران تھا بہت سے زمین کی طرف سفر کیا اور ان کوفتح کیا ، اللہ کا انصاف اور قانون کے مہينوں کے قیام. اللہ Ta'ala اسے تمام شکلوں اور مواد کی طاقت ہے جس کے ذریعے انہوں ان کی فتوحات اور مشن کو لے کر گیا تھا کے ساتھ فراہم کی.

    انہوں نے ایک بار تین سمتوں میں ایک مشن ہے ، دور مغرب ، مشرق بعید کیا ، اور پھر ایک شمالی سمت میں. یہاں یہ تھا کہ انہوں نے جو یاجوج اور Majooj کے قبائل ہیں جو دو عظيم پہاڑوں کے پیچھے زمین کو آباد اور اکثر ان پہاڑوں کے پیچھے سے ابھر کر سامنے آئے ان کے درمیان انتشار اور لوٹ مار کے واقعات میں کرنا کے بارے میں اس سے شکایت کی ایک گوترا کے حصہ میں بھر آیا. انہوں نے Zul ذوالقرنین (ع) سے درخواست کی کہ وہ اپنے اور یاجوج ماجوج بنی کے قبائل کے درمیان ایک رکاوٹ ہے تاکہ وہ ان کے مظالم سے بچا سکتے تھے کھڑی ہے. ان کے اختیار میں مواد کی طاقت کے ساتھ ، Zul ذوالقرنین (ع) دو پہاڑوں کے درمیان کھڑی ایک اعلی دیوار کے بارے میں ان کی جسمانی مشقت اور سیٹ سے بھرتی کی. دیوار کی اونچائی یا اس کے عین مطابق کی حد کے نامعلوم ہے. کیا ہے نام سے جانا جاتا ہے کہ دونوں پہاڑوں کے سربراہی اجلاس کے اس دیوار کی اونچائی تک پہنچ جاتا ہے. یہ لوہے کی ، جس میں پگھلا ہوا کی قیادت کی طرف سے مزید مضبوط ہے کے بلاکس یا چادریں کے ساتھ بنایا گیا ہے. اس طرح میں یاجوج اور Majooj دیوار پیمانے پر کرنے کے قابل نہیں ہیں ، یا جب تم میں سے کسی ایک کو یہ اللہ کی مرضی ہے سوائے پار ،.

    "اور میرے رب approaces کا وعدہ ، جب انہوں نے اسے مٹی کی سطح جائے گا" (18:98 قرآن)

    انہوں نے برف کی ایک زمین ہے جو ہمارے gazes اور باکل درست ہے جس کے نامعلوم ہے سے چھپی ہے میں واقع ہیں. اگرچہ اس سلسلے میں کئی تشریحات موجود ہے ، ان میں سے کوئی بھی مکمل کرنے کے لئے کہا جا سکتا ہے.

    یاجوج اور Majooj انسان ہیں اور ایک روایت کے مطابق وہ Yafith بن Nooh (ع) کی اولاد سے ہیں.

    بعض احادیث مبارکہ ہے...

    حضرت Nawwas بن Sam'aan (رضی اللہ عنہ) کی طرف سے ایک طویل حدیث میں Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) نے کہا ہے کی اطلاع دی ہے :

    "... اللہ عیسی (ع) پر وحی بھیج کہ' میرے ایک مخلوق ہے کہ کوئی طاقت ان کو روکنے کے لئے قابل ہو جائے گا اب ابھر کر سامنے جا رہا ہے لہذا میرے بندوں کو لے لو اور طور کے پہاڑ چڑھنا.. ' یاجوج اور Majooj پھر ابھر کر سامنے آئے اور ان کے تمام فیری میں نکلنے میں اضافے جب ان میں سے وہ لوگ جو ان کی فوج کے سابق حصہ قیام Tiberias (جو شمالی فلسطین میں ہے) کی جھیل کے پاس گے ، انہوں نے سب سے پانی پیتے ہیں اس وقت کی طرف سے جھیل اور وہ لوگ جو اسی فوج کا آخری حصہ کا قیام جھیل کے پاس ، وہ کہتے ہیں ، "اس پانی کرتے تھے یہاں (بہت پہلے). 'ہم نے زمین کے لوگوں کو فتح ہے ، اب ہم نے آسمان میں ان annihilate گا.' جب وہ یروشلم میں خمر کے پہاڑ تک پہنچ جاتے ہیں ، وہ بڑائی کا اعلان کرے گا تو کہہ رہے ہیں وہ آسمان کی طرف ان کے تیر کو آگ گا. جب تیر زمین پر واپس وہ خون سے بھرا جائے گا.

    اس دوران میں عیسی (ع) اس کے پیروکاروں کے ساتھ طور پہاڑ پر جائے گا. اس وقت بیل اور کے سربراہ کے طور پر قابل قدر کے طور پر اس دن میں ایک سو آپ کو دینار ہے. [یہ دفعات کے کمی کی طرف اشارہ کرتا ہے]. ان مشکلات کا سامنا ، عیسی (ع) اور اپنے پیروکاروں کو اللہ پاس دعا (اس مصيبت کو دور کرنے کے لئے) کر دے گا. نتیجے کے طور پر ، اللہ گھاووں جو ان لوگوں کے ہر فرد کی گردنوں پر ان کی موت کی وجہ سے اچانک نمودار ہوگی کی وجہ سے کرے گا. جب عیسی (ع) اور اپنے پیروکاروں کو طور پہاڑ سے اترتے ہیں وہاں زمین میں جہاں ان لوگوں کے مرنے سڑ لاشیں littered نہیں ہے پر ایک بھی جگہ نہیں ، horrendous گند دے گا. عیسی (ع) اور اپنے پیروکاروں کو ایک بار ایک جس کے نتیجے میں اللہ نیچے بڑی پرندوں جن کی گردنوں اونٹوں کی گردنوں کے طور پر جیسا کہ گاڑھا ہو جائے گا بھیجیں گے کے طور پر زیادہ اللہ پاس درخواست کرے گا اور وہ جگہ جہاں اللہ نے چاہا میں ان کی لاشیں سننکشیپ . (ترمذی کی طرف سے ایک روایت کے مطابق ، وہ نامی Nahbal جگہ پر پھینک دیا جائے گا).

    اللہ Ta'ala پھر ایک بھاری بارش بھیجنے ، پانی اچھی طرح صفائی زمین کے ہر حصے میں جن کے بہاؤ گے. یہ چالیس دن کی مدت کے لئے بارش گا.

    مسلمانوں کو سات سال کی مدت کے لئے یاجوج اور ماجوج بنی کے دخش اور تیر تو جل جائے گا.

    اللہ کی زمین کا حکم آگے بہتایت میں اپنے فصلوں کی پیداوار اور وہاں ایسی نعمت اور خوشحالی ہے کہ ایک انار ایک پورے گروپ کے لئے کافی ہوں گے جبکہ پیل ہاں ان پر چھایا کاسٹ کرنے کے لئے کافی ہوں گے کیا جائے گا. ایک اونٹ کا دودھ بہت سے گروہوں کے لئے کافی ہوں گے جبکہ ایک گائے دے دودھ ایک مکمل گوترا کے حصہ میں کے لئے کافی ہو جائے گا. ایک دودھ دینے بکری ایک پورے خاندان کے لیے کافی ہو جائے گا... "

    (مسلم)

    حضرت ابو سعید (رضی اللہ عنہ) Khudri کے بیان کہ Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) نے کہا :

    "Qiyamah اللہ کے دن آدم (ع) کا کہنا ہے کہ اس کی ساری اولاد سے Jahannamis لینے آدم (ع) سے پوچھیں گے :'؟ O رب ، جو وہ کر رہے ہیں '

    اللہ تعالی کہیں گے : 'نو اور سو نوے کے نو Jahannami ایک ہزار ہیں جبکہ ایک ایک Jannati ہے.'

    صحابہ نے یہ سن کر خوف کے غالب اور تھے وہ "O Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) سے پوچھا ، جو ایک Janniti جائے گا؟'

    Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) نے کہا : 'غم ، نو اور سو نوے نو یاجوج اور ماجوج بنی ہو سکتا ہے جب تم Jannati ہو گا نہیں کیا". (یعنی ان کے سلسلے میں اپنی تعداد میں ایک ہو جائے گا ہزار).

    (بخاری و مسلم)

    حضرت عبداللہ بن عمر (رضی اللہ عنہ) کہتے ہیں کہ Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) نے کہا :

    "اللہ Ta'ala دس حصوں میں بنی نوع انسان تقسیم نو دسوان ڈگری یاجوج اور ماجوج بنی کا قیام ہے کی جب کہ باقی دسوان ڈگری باقی لوگوں کے constitutues.."

    حضرت زینب بنت Jahsh (رضی اللہ عنہ) کا کہنا ہے کہ : "... ایک بار Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wassallam) ایسی نیند کہ اس کا چہرہ سرخ تھا سے awoke اور ان الفاظ ان کی زبان پر تھے :' اللہ کے سوا عبادت کے قابل نہیں ہے تباہی ہے شر کی وجہ سے جو ان کے قریب آ گیا ہے پر عربوں پر. آج اس کے طور پر بڑی کے طور پر ایک سوراخ کو یاجوج اور ماجوج بنی کی دیوار میں کھول دیا ہے. ' .. اور Rasulullah (Sallallahu Alayhi Wasallam) ان کی شہادت کی انگلی اور انگوٹھے کے ساتھ ایک انگوٹی کے قیام کے سوراخ کے سائز کا اشارہ کیا. "

    (بخاری و مسلم)

    حضرت ابو Hurairah (رضی اللہ عنہ) کا بیان ہے کہ ہر روز یاجوج اور ماجوج بنی (ڈی آئی جی) توڑ Zul ذوالقرنین (ع) کی طرف سے دیوار کے ذریعے تعمیر کیا یہاں تک کہ وہ اس حد تک کہ وہ اس کے اختتام تک پہنچنے پر روشنی دراصل دیکھ سکتے ہیں دوسری طرف. وہ پھر لوٹ (گھر) کہہ رہے ہیں کہ 'ہم نے کل کے ذریعے توڑ دے گی.' لیکن اللہ Ta'ala دیوار کو اس کی اصل موٹائی اور اگلے دن وہ پھر سے دیوار کے ذریعے کھدائی شروع کرنے کے لئے واپس آجائے کی وجہ سے ہے ، اور ہر دن جب تک جب تک اللہ چاہے انہیں قید رہنے کے لئے اس عمل جاری ہے. اللہ ان کو جاری کرنے کے لئے جب چاہے ، تو جس دن وہ کہیں گے کے آخر میں ، "اگر اللہ نے چاہا ، ہم کل کے ذریعے توڑ دے گی." اگلے دن وہ اس دیوار کو تلاش کیونکہ وہ چھوڑ پچھلے دن (یعنی یہ اس کی اصل حالت میں واپس نہیں پڑے گا) تھا اور وہ اس کا باقی حصہ کو توڑنے کے بعد آئے گی. "

    (احمد ، ترمذی ، ابن Majah)

    مندرجہ بالا حدیث پر تبصرہ کرتے ہوئے علامہ ابن العربی کا کہنا ہے کہ ، تین معجزات نے اس حدیث میں واضح ہیں :

    1) یہ ان قبائل نے اس وقت ہوتی ہے کبھی نہیں ہے کہ وہ رات کے دوران کام جاری رہنا چاہئے. ان سب کے بعد ، انہوں نے اتنی بڑی تعداد میں ہیں کہ وہ آپس میں کام آسانی سے اور شفٹوں میں کام سپرد کر سکتے ہیں. لیکن اللہ نے یہ خیال ان ہونے کی اجازت نہیں دیتا.

    2.) یہ ان سے اس وقت ہوتی ہے کبھی نہیں ہے کہ وہ صرف پہاڑوں یا دیوار ہے ، جس سے وہ سامان اور کو لاگو کرتا ہے جس میں وہ بڑی تعداد میں پاس ہے امداد کے ذریعے کر سکتے ہیں پیمانے پار کر سکتے ہیں. وہاب بن Munabbah کی طرف سے ایک روایت کے مطابق یہ معلوم ہے کہ ان قبائل کو کسانوں اور مختلف قسم کے سامان کی حامل artisians رہے ہیں.

    3). کہا کہ "اگر اللہ چاہتا ہے" میں داخل ہوتا ہے ان کے دماغ کو کبھی نہیں اور یہ صرف ان سے یہ کہنا ہے کہ جب اللہ چاہتا ہے کہ انہیں رہا کیا جائے واقع ہو گا کے بارے میں سوچا.

    سے : "Qiyamah کی نشانیوں"
    محمد علی ابن زبیر علی کی طرف سے

  5. #5
    Join Date
    Apr 2010
    Posts
    779
    Points
    959.65
    Rep Power
    10000


 

Thread Information

Users Browsing this Thread

There are currently 1 users browsing this thread. (0 members and 1 guests)

     

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •