• The Facebook Platform

Results 1 to 2 of 2
  1. #1
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    اللہ کی زمین
    Age
    28
    Posts
    383
    Points
    521.88
    Rep Power
    920

    Default عجب سی بے سکونی ہے

    مجھے اس زندگانی سے کوئی شکوہ نہیں لیکن
    ذرا سی بے سکونی ہے
    نجانے کیوں مرے دل میں
    عجب اک خوف رہتا ہے
    مجھے محسوس ہوتا ہے
    کہ میرے دل کے دروازے پہ
    تیری یاد کی دستک میں وہ شدت نہیں باقی
    بہت سی خاص باتیں ہیں
    جو مجھ کو عام لگتی ہیں
    مرے دل میں انہیں سن کر کوئی طوفاں نہیں اُٹھتا
    تری آنکھیں ترا چہرہ
    تری آواز کی رم جھم
    سبھی کچھ خواب لگتا ہے
    مجھے محسوس ہوتا ہے
    سنہری تتلیوں جیسے
    وہ سب خوش رنگ سے سپنے
    مرے لفظوں کے پھولوں پر
    بہت دن سے نہیں بیٹھے
    مجھے محسوس ہوتا ہے
    سمے کی تیز لہروں نے
    ہمارے ریت کے کچے گھروندے توڑ ڈالے ہیں
    مجھے اُن تیز لہروں سے
    سنہری تتلیوں جیسے
    سبھی خوش رنگ سپنوں سے
    کوئی شکوہ نہیں لیکن
    ذرا سی بے سکونی ہے
    مجھے محسوس ہوتا ہے
    تمہارے دل کے دروازے پہ میری یاد کی دستک
    مری جاں اب نہیں ہوتی
    مری جاں اب نہیں ہوتا
    کہ میری یاد آئے تو
    تمہاری آنکھ بھر آئے
    دعائیں مانگتے لمحے
    مجھے تم بھول جاتی ہو
    مگر پھر مجھے تم سے
    کوئی شکوہ نہیں لیکن
    عجب سی بے سکونی ہے
    عجب اک خوف ہے دل میں
    میں تم کو بھول جاؤں گا






    Signature - عجب سی بے سکونی ہے
    idf69z - عجب سی بے سکونی ہے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2011
    Posts
    8
    Points
    8.00
    Rep Power
    0

    Default

    اچھی شاعری ہے
    شیئر کرنے کے لیے شکریہ


 

Thread Information

Users Browsing this Thread

There are currently 1 users browsing this thread. (0 members and 1 guests)

     

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •