• The Facebook Platform

Results 1 to 1 of 1
  1. #1
    Join Date
    Dec 2011
    Posts
    13
    Points
    13.47
    Rep Power
    19

    new_new Send by Real Friend

    پہلے تُم نے سارے شہر کی سانسوں میں گرداب بھرے
    راہ دکھاتے پھرتے ہو اب ، جیبوں میں مہتاب بھرے

    ساری عمر حساب نہ آیا ، بچپن سے لیکر اب تک
    سارے ٹھیک سوال اُتارے، سارے غلط جواب بھرے

    سچّی بات تو میٹھی بات بھی ہو سکتی ہے میرے دوست
    کتنے دھبّے چھوڑ گۓ ہیں، حرف تیرے تیزاب بھرے







    میرے لڑکپن کی یادوں کی چوکھٹ پر، کوئ لڑکی
    اب تک بیٹھی ہے، آنچل میں، جُگنو اور گُلاب بھرے


 

Thread Information

Users Browsing this Thread

There are currently 1 users browsing this thread. (0 members and 1 guests)

     

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •